وہابیوں کے پیشوا قاضی محمد بن علی شوکانی نے اپنی کتاب ”تحفۃ الذاکرین“ میں لکھتے ہیں:
حوالہ :  اختصاصی سایت الوهابیه

ويتوسل إلى الله سبحانه بأنبيائه والصالحين أقول ومن التوسل بالأنبياء ما أخرجه الترمذي۔۔۔ من حديث عثمان بن حنيف رضي الله عنه۔۔۔ وأما التوسل بالصالحين فمنه ما ثبت في الصحيح أن الصحابة استسقوا بالعباس رضي الله عنه عم رسول الله صلى الله عليه وسلم

(تحفۃ الذاکرین: ص56

ترجمہ: اللہ کی جانب اس کے انبیاء اور صالحین سے توسل کیا جائے گا، انبیاءعلیہم السلام سے توسل کرنے کے باب سے وہ حدیث ہے جسےامام ترمذی رحمہ اللہ وغیرہ نے حضرت عثمان بن حنیف سے روایت کیا ہے۔۔۔ صالحین سے توسل کرنے کے باب سے صحیح بخاری میں یہ حدیث موجودہے کہ صحابہ رضی اللہ عنہم نے حضور صلی اللہ علیہ و سلم کے چچا حضرت عباس رضی اللہ عنہ کے وسیلہ سے استسقاء کیا۔

حضرت عثمان بن حنیف رضی اللہ عنہ والی حدیث کہ” ایک آدمی حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ کے پاس بار بار جاتا تھا الخ“ کوذکر کرنے کے بعد لکھتے ہیں:وفي الحديث دليل على جواز التوسل برسول الله صلى الله عليه و سلم إلى الله عز وجل

 

الذکرین.pngالصالحین.png

نام
نام خانوادگی
ایمیل ایڈریس
ٹیکسٹ